10

خاتون صحافی کی موت: اسرائیلی میڈیا کا صہیونی ریاست کے بیانیے کا دفاع کرنا مشکل ہوگیا

مقبوضہ بیت المقدس(نیوزمارٹ ڈیسک)عبرانی اخبارات کا خیال ہے کہ اسرائیلی میڈیا اور اس کے اسرائیلی قابض فوجیوں کے قتل کے حوالے سے صحافی شیرین ابو عاقلہ کو ایک مخمصے کا سامنا ہے۔ اسرائیلی میڈیا فلسطینی بیانیے کے سامنے بے بس اور لاچار دکھائی دیتا ہے کیونکہ اس وقت عالمی رائے عامہ میں بھی ابو عاقلہ کو مظلومیت کی علامت اور اسرائیل کو ایک ظالم کے طور پر پیش کیا جا رہا ہے۔اخبار نے لکھا کہ شیرین ابو عاقلہ کا قتل سنہ 2000 میں کم سن بچے الدرہ کے قتل کی طرح ہے جسے اسرائیلی فوج نے بچے محمد الدرہ کے کیس کا ایک ترقی یافتہ ورژن ہے، جسے 2000 میں قابض فوج کی گولیوں سے اس وقت موت کے گھاٹ اتار دیا گیا تھا جب وہ دوسرے انتفاضہ کے آغاز میں اپنے والد کی گود میں تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں