30

لانگ مارچ ملتوی،جب ٹھیک ہو جاﺅںگا تب اسلام آباد کی کال دونگا،عمران خان

اسلام آباد (نیوزمارٹ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پہلے پتا تھا وزیر آباد یا گجرات میں مجھے مارنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔مجھ پر سلمان تاثیر کی طرح قتل کروانے کا منصوبہ بنایا گیا۔ شہباز شریف، رانا ثناء اللہ سمیت تین افراد کے استعفے تک کارکن ملک بھر میں احتجاج کریں، جب تک 3 لوگ مستعفی نہیں ہونگے تب تک احتجاج ہو گا، عوام تیار رہے، جیسے ہی ٹھیک ہوا اسلام آباد کی کال دوں گا۔ وزیر آباد میں پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ میں زخمی ہونے کے بعد شوکت خانم ہسپتال میں زیر علاج سابق وزیراعظم نے کہا کہ میرے اوپرحملہ کیا گیا اور مجھے مارنے کی کوشش کی گئی، لانگ مارچ میں روانہ ہونے سے ایک دن پہلے پتا چلا تھا کہ وزیر آباد یا گجرات میں مجھے مارنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔ وزیرآباد حملے میں انہیں 4 گولیاں لگی ہیں۔ پی ٹی آئی چیئر مین کا کہنا تھا کہ امریکی عہدیدار ڈونلڈ لو نے دھمکی دی کہ عمران خان کو ہٹا دیں اور تحریک عدم اعتماد کے ذریعے حکومت گرادی جاتی ہے۔ مجھے لوگ ووٹ اس لیے دیتے ہیں کہ لوگ ان سے تنگ تھے اور اس کے بعد وہی اسٹیبلشمنٹ فیصلہ کرتی ہے کہ اب تبدیلی کا وقت آگیا ہے اور وہ ان کو واپس لے آتی ہے اور یہی سازش ہوتی ہے۔ ایک بیرونی اور ایک اندرونی سازش ہوتی ہے اور کہتے ہیں ہم نیوٹرل ہوگئے ہیں، نیوٹرل کا کوئی بھی مطلب لیں، انہیں پتا تھا سازش ہو رہی تھی لیکن راستہ نہیں روکا۔ اس ملک میں اسٹیبلشمنٹ کو عادت پڑگئی تھی کہ جہاں وہ دھکیلیں گے لوگ وہاں چلے جائیں گے، جب وہ تبدیلی لے کر آتے ہیں ٹھائیاں بٹتی ہیں، اسٹیبلشمنٹ کو یہ عادت تھی، ان کو ایک دھچکا پڑا کہ پاکستانی قوم نے فیصلہ کیا 30 سال سے جو چوری کر رہے ہیں ان کے ساتھ نہیں جانا چاہتے۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ 90ءکی دہائی میں دو حکومتوں کو کرپشن کی وجہ سے نکالا گیا، ان لوگوں نے اس وقت مٹھائیاں بانٹیں تھیں، پرویز مشرف نے اس کے بعد ان کو این آر او دینے کا فیصلہ کیا، این آر او کی وجہ سے پاکستان کا قرضہ چار گنا بڑھا، اب یہ این آرو ٹو لے رہے ہیں، میں تو جدوجہد کر کے اوپر آیا تھا، واپس توعوام میں ہی جانا تھا، جس طرح عوام نے میری حوصلہ افزائی کی حیران رہ گیا، ہم نے25مئی کولانگ مارچ کا اعلان کیا، انہوں نے ہمارے خلاف 3 لانگ مارچ کیے تھے، انہوں نے 25 مئی کوہمارے لوگوں پرتشدد اورلوگوں کو پکڑ کر جیلوں میں ڈالا۔انہوں نے مزید کہا کہ اسلام آباد میں خواتین پرشیلنگ کی گئی، کیا لانگ مارچ ان کے لیے جائزہے؟ سازش کے ذریعے چوروں کو بٹھا دیا گیا ہم نے احتجاج کیا تو تشدد کیا گیا، یہ پاکستان کی عوام کو نہیں سمجھ سکے، بند کمروں میں فیصلے کرتے ہیں، حقائق کا ان کو پتا نہیں قوم نے امپورٹڈ حکومت کو مسترد کردیا تھا، حقائق جاننے کے بجائے بھیڑ، بکریوں کی طرح لوگوں کو مارا گیا، ضمنی الیکشن میں الیکشن کمیشن نے ہرقسم کی ان کے لیے دھاندلی کی، الیکشن کمیشن نے ای وی ایم کی مخالفت کی، ای وی ایم کو جان بوجھ کر نہیں آنے دیا گیا، دوپارٹیوں اورہینڈلرزنے ای وی ایم کی مخالفت کی۔ اس کے باوجود تحریک انصاف نے کلین سوئپ کیا، اس کے بعد ہینڈلرز میجر جنرل فیصل آ جاتا ہے جو کہتا ہے میں بتاو¿ں گا کیسے سیدھا کیا جاتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں