42

پوتن کی روس چین تعلقات کو خراب کرنے کی کوششوں کی مذمت

ماسکو (ویب ذرائع) روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے ماسکو اور بیجنگ کے مابین دوریاں پیدا کرنے کے مقصد کے تحت اٹھائے گئے اقدامات کی مذمت کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ چین کوئی خطرہ نہیں بلکہ ایک اسٹریٹجک شراکت دار ہے ۔

پوتن نے امریکی ٹیلی ویژن نیٹ ورک این بی سی کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ہم روس اور چین کے مابین تعلقات کے خاتمے کی کوششوں کو دیکھ سکتے ہیں۔ ہم دیکھ سکتے ہیں کہ یہ کوششیں عملی پالیسیوں کی شکل میں کی جارہی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ہم اپنے تعلقات کی بے مثال اعلیٰ سطح سے خوش ہیں کیونکہ اس نے گزشتہ چند دہائیوں سے ارتقائی مراحل طے کیے ہیں ۔ ہم اسے اپنے چینی دوستوں کی طرح ہی پسند کرتے ہیں ، جسے ہم دیکھ سکتے ہیں۔

پوتن نے سیاست سے لے کر معیشت اور ٹیکنالوجی سے لے کر فوج تک دونوں ملکوں کے مابین تمام شعبوں میں اعلی سطح کے اعتماد اور تعاون کو سراہا ۔

انہوں نے کہا کہ ہم یقین نہیں رکھتے کہ چین ہمارے لئے کوئی خطرہ ہے، بلکہ چین دوست قوم ہے۔ اس نے ہمیں ایک دشمن قرار نہیں دیا جیسا کہ امریکہ نے کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایک بہت بڑے اور طاقتور ملک کی حیثیت سے چین اپنی عظیم معیشت اور غیر ملکی تجارت کے زبردست حجم کے ساتھ ترقی کر رہا ہے۔

روسی رہنما نے کہا کہ ہم چین کے ساتھ کام کر رہے ہیں اور چین کے ساتھ اس کام کو جاری رکھا جائے گا، جو گہری خلاؤں کی کھوج لگانے کے ساتھ ساتھ ہر طرح کے پروگراموں پر لاگو ہوتا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں