58

مناسب قیمت پر معیاری مصنوعات کی دستیابی یقینی بنانے کے لئے آٹومیشن کا عمل جلدمکمل کیا جائے، وفاقی وزیر شبلی فراز

کراچی(نیوزمارٹ ڈیسک):وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے پاکستان اسٹینڈرڈز اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی (پی ایس کیو سی اے)کو ہدایت کی ہے کہ عوام کو مناسب قیمت پر معیاری مصنوعات کی دستیابی کو یقینی بنانے کے لئے جلد از جلد آٹومیشن کا عمل مکمل کیا جائے۔ جمعہ کو یہاں پی ایس کیو سی اے کے دورے کے موقع پر وفاقی وزیر نے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ اشیاء صرف کے معیار کو برقرار رکھنے کے لئے ملک میں قوانین موجود ہیں لیکن نظام میں خامیوں اور مکمل عملدرآمد نہ ہونے کے باعث مارکیٹ میں غیر معیاری اشیاءکی خریدوفروخت جاری ہے۔.وفاقی وزیر نے کہا کہ اس سلسلے میں جدید ٹیکنالوجی کا استعمال اور آٹومیشن کلیدی حیثیت رکھتے ہیں،نظام میں موجود خامیوں کی نشاندہی، نفاذ کے طریقہ کار کو مستحکم بنانے اور انضباطی فریم ورک کو عملی شکل دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ مصنوعات کے معیار کے بارے میں مکمل معلومات عام کی جائیں تاکہ صارفین اس معلومات کی بنیاد پر اپنی ضرورت کی اشیاءکا انتخاب آسانی سے کرسکیں۔ بعدازاں ، شبلی فراز نے میڈیا سے گفتگو کرتے کہا کہ پی ایس کیو سی اے بین الاقوامی معیار کے مطابق مصنوعات کے معیار کو یقینی بنانے کے لئے 166 بنیادی مصنوعات کی نگرانی کر رہا ہے جس میں تین بنیادی عناصرتحفظ، کارکردگی اور قیمت پر توجہ دی جارہی ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ اسٹینڈرڈائزیشن کا مروجہ عمل طویل اور پیچیدہ ہے جس میں کئی مراحل میں انسانی مداخلت کا پہلو موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ خودکار نظام کے تحت درخواست دائر کرنے ، جانچ پڑتال اور لائسنس کے اجرائ تک تمام مراحل کو مکمل خود کار طریقہ سے مکمل کی جائے گا جس سے نہ صرف درخواست دہندہ کا وقت بچے گا بلکہ وہ دائر درخواستوں پر پیش رفت سے بھی آگاہ رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مصنوعات کی درجہ بندی کے لئے ایک نیا طریقہ کار وضع کیا جارہا ہے جو مصنوعات کے معیار ، کارکردگی اور قیمت کی بنیاد پر ان کی گریڈنگ کا تعین کرے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ایس کیو سی اے پاکستان میں تیار کی جانے والی گاڑیوں کے معیار اورسیفٹی کو عالمی معیارات کے ہم آہنگ بنانے کے لئے حکمت عملی تیار کر رہا ہے۔ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) سے متعلق سوال پر شبلی فراز کا کہنا تھا کہ ای وی ایم پاکستان میں تیار کیا جارہا ہے اور کام آخری مراحل میں داخل ہوگیا ہے، وزیر اعظم عمران خان انتخابات کا ایسا نظام چاہتے ہیں جس کے نتائج تمام فریقین کے لئے قابل قبول ہوں تاکہ کوئی بھی انتخابی نتائج پر اعتراض نہ اٹھاسکے اور جمہوری نظام بہتر طریقے سے کام کرتا رہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں قانون سازی ہوئی ہے اور ملکی سطح پر الیکٹرونک ووٹنگ مشین کی تیاری کا عمل جاری ہے۔ وفاقی وزیر نے پارلیمنٹ میں اراکین کے طرزعمل سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ بعض اپوزیشن پارٹیاں اپنی قیادت کو بچانے کے لئے ایوان کی کارروائی میں مداخلت کر رہی ہیں۔ وزیر اعظم کی تقریروں اور حتی کہ بجٹ تقریر کے دوران بھی رکاﺅٹیں ڈالی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت پارلیمانی کارروائی بطریق احسن چلانا چاہتی ہے تاکہ جمہوری نظام پروان چڑھے اور مضبوط ہو لیکن اپوزیشن دوسروں کو سننے یا بولنے نہیں دینا چاہتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں جمہوریت ہے اور منتخب نمائندوں کے لئے معیار کا تعین ووٹرز کو کرنا ہے۔ سندھ میں ترقی کی صورتحال سے متعلق ایک سوال پر وفاقی وزیر نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت نے اپنے 13 سالہ طویل حکمرانی میں کھربوں روپے وفاق سے حاصل کئے لیکن سندھ کے لوگ پینے کے پانی ، تعلیم اور صحت جیسی بنیادی سہولیات سے بھی محروم ہیں۔ وفاقی وزیر شبلی فراز نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے سندھ کے لئے ریکارڈ فنڈز مختص کیے ہیں جو وزیر اعظم عمران خان کے صوبے کی ترقی کے عزم کا مظہر ہے،پی ٹی آئی سندھ کے مسائل کو اجاگر کرتی رہے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں