60

بھارتی ایتھلیٹ ملکھا سنگھ کوویڈ۔19 کے باعث انتقال کر گئے

نئی دہلی(نیوزمارٹ ڈیسک)بھارت میں کھیلوں کی دنیا کا ایک بڑا نام اور “فلائنگ سکھ” کا لقب پانے والے ایتھلیٹ ملکھا سنگھ نوول کرونا وائرس کے باعث 91 سال کی عمر میں انتقال کر گئے ہیں۔

ملکھا سنگھ نے گزشتہ روز رات کے وقت ملک کے شمالی شہر چندی گڑھ میں دم توڑا۔

گزشتہ ماہ ان کا نوول کرونا وائرس ٹیسٹ مثبت آیا تھا اور 5 دن قبل ہی عالمی وباء کے باعث انکی اہلیہ نرمل کور بھی چل بسی تھیں۔

ملکھا سنگھ 1958 کی دولت مشترکہ کھیلوں کے چیمپئن بنے اور انہوں نے ایشیائی کھیلوں میں 4 مرتبہ سونے کے تمغے جیتے تھے۔

انہوں نے 1956 اور 1964 کی اولمپکس میں بھی بھارت کی نمائندگی کی اور انہیں 1959 میں پدما شری سویلین ایوارڈ سے نوازا گیا۔

ملکھا سنگھ 1958 میں کارڈف میں منعقد ہونیوالی سلطنت برطانیہ و دولت مشترکہ کھیلوں میں سونے کا تمغہ جیتنے والے پہلے بھارتی ٹریک و فیلڈ ایتھلیٹ تھے۔ ان کا سب سے یادگار لمحہ 1960 کی روم اولمپکس کا تھا جہاں 400 میٹر دوڑ کے فائنل میں چوتھے نمبر پر دوڑ ختم کرتے ہوئے ان کی تصویر بنی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں