60

پاکستان بارے بیان کیوں دیا؟ محبوبہ مفتی کو گرفتار کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد(نیوزمارٹ ڈیسک) میڈیا رپورٹ مطابق جموں کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کے کشمیر اور پاکستان کے حوالہ سے بیان پر انہیں گرفتار کرنے کا مطالبہ سامنے آ گیا ہے
بھارتی وزیراعظم مودی نے کشمیر پر اے پی سی طلب کر رکھی ہے جس میں آج محبوبہ مفتی بھی شریک ہوں گی، شرکت سے قبل محبوبہ مفتی نے بیان دیا تھا کہ ہم بات چیت کے مخالف نہیں ہیں۔ بھارتی حکومت کا جو بھی ایجنڈا ہے ہم اپنا ایجنڈا ان کے سامنے رکھیں گے ہمارے لوگ جو جیلوں میں ہیں انہیں رہا کردیا جائے۔ اگر رہائی نہیں دے سکتے ہیں تو کم از کم انہیں جموں و کشمیر لائیں اور اہلخانہ کے افراد سے ملنے کی اجازت دی جائے 5 اگست کا اقدام غیر قانونی اور غیر آئینی ہے مقبوضہ کشمیر میں امن اسی وقت بحال ہو گا جب یک طرفہ فیصلہ واپس لیا جائے گا خصوصی آئینی حیثیت کی بحالی کے بغیر جموں و کشمیر اور اس پورے خطے میں امن کی بحالی نا ممکن ہے ،کشمیر کے حوالہ سے بات چیت میں پاکستان کو بھی شامل کیا جائے اور ایسی اے پی سی جموں کشمیر میں ہونی چاہئے تھی

محبوبہ مفتی کے اس بیان کے بعد کہ کشمیر کے حوالہ سے اے پی سی میں پاکستان کو بھی شامل کرنا چاہئے پر ڈوگرا فرنٹ نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے اور محبوبہ مفتی کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے ،مظاہرین کا کہنا تھا کہ محبوبہ مفتی کو مودی کی اے پی سی میں شرکت کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے اور اسے دوبارہ حکومت جیل میں ڈالے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں