54

صوبائی حکومت عوامی بجٹ دینے میں ناکام، متحدہ اپوزیشن نے مسترد کر دیا۔ سعدیہ دانش

گلگت (پناہ نیوز ڈیسک) پیپلز پارٹی کی رکن گلگت بلتستان اسمبلی و صوبائی سکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت عوامی بجٹ دینے میں ناکام رہی اس لئے متحدہ اپوزیشن نے اسے مسترد کر دیا۔ بجٹ اجلاس میں اپوزیشن اراکین کو اظہارِ خیال کا موقع نہ دینا حکومتی بدنیتی تھی۔ اپوزیشن کو دیوار سے لگا کر چلنے کی کوشش حکومت کی غلط فہمی ہے۔ نئے پاکستان کا خواب دکھانے والوں نے عوام کو مہنگائی کی چکی میں پیسا ہے۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہ میں صرف دس فی صد کا اضافہ مہنگائی کی شرح کے حساب سے اونٹ کے منہ میں زیرے کے مترادف ہے۔ عوام مہنگائی کی وجہ سے پریشان حال ہیں اور کمر توڑ مہنگائی نے سب کا جینا محال کیا ہے اور ان کو ریلیف دینے کے لئے خاطر کوئی اقدامات نہیں اٹھائے گئے ہیں۔ ان کے عوام دشمن پالیسیوں کی وجہ سے ملازمین ذہنی دباؤ کا شکار ہو رہے ہیں۔موجودہ بجٹ بھی الفاظ کا ہیر پھیر اور حسبِ سابق روایتی بجٹ ہے جس سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ بجٹ عوامی نوعیت کا نہیں ہے۔ صوبائی حکومت کسی بھی شعبے میں عوام کو ریلیف نہیں دے سکی ہے۔ بلند بانگ دعووں کے ساتھ اقتدار میں آنے والی حکومت مسلسل ناکام ہوتی جارہی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے جو اعلانات کئے تھے ان اعلانات پر عملدر آمد نہیں ہو رہا ہے جبکہ وفاق میں ان کی جماعت اور حکومت عوامی نوعیت کے فیصلوں پر تاریخی یوٹرن لیکر آئے دن عوام کش فیصلے کر رہے ہیں۔ گلگت بلتستان کے حالیہ انتخابات میں تعمیر و ترقی کے ہوائی قلعے تعمیر کئے جارہے تھے مگر عملی ان وعدوں اور دعووں پر عمل ہونا مشکل نظر آرہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت گلگت بلتستان کے عوامی مفادات کے لئے کسی بھی حد تک جانے کے لئے تیار ہیں۔اپوزیشن بھرپور احتجاج کے لئے تیار ہے۔ پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے عوامی مفادات کے تحفظ کے لئے ہر ممکن حد تک جائے گی۔ وفاقی حکومت کے منفی اثرات گلگت بلتستان میں بھی مرتب ہونا شروع ہوئے ہیں جس سے عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگا۔ صوبائی حکومت وقت گزاری کی کوشش کر رہی ہے تاہم اپوزیشن انہیں بھاگنے نہیں دے گی اور نظام حکومت نہیں چلنے دیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں