39

مزارات ہمارا تاریخی ورثہ ہیں، درباروں کے اطراف اراضی بروئے کار لانے کیلئے جامع پلان بنانے کی ہدایت،عمران خان

اسلام آباد: ( نیوزمارٹ ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک بھر میں مزارات ہمارا تاریخی ورثہ ہیں، درباروں کے اطراف میں واقع اراضی کو مناسب طریقے سے استعمال میں لانے کے لئے جامع پلان تشکیل دیا جائے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو اپنے زیر صدارت حضرت داتا گنج بخشؒ کے مزار کے جامع ڈویلپمنٹ ومینجمنٹ منصوبے، لاہور کی تاریخی بادشاہی مسجد اور پنجاب میں دیگر مزارات کے تحفظ اور بحالی و آرائش کے حوالے سے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

وزیرِاعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار،صوبائی وزیر اوقاف پیر سید سعید الحسن ، صوبائی وزیرِ خزانہ ہاشم جوان بخت، معاون خصوسی وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، چیف سیکرٹری پنجاب و دیگر سینئر حکام وڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔ وزیر مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب بھی اجلاس میں موجود تھے۔

وزیرِاعظم کو لاہور کے تاریخی و مذہبی مقامات حضرت داتا گنج بخش علی ہجویری کے مزار اور بادشاہی مسجد کے تحفظ اور بحالی و آرائش کے حوالے سے منصوبے پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

داتا دربار کے حوالے سے بتایا گیا کہ اس منصوبے میں دربار میں زائرین کی سہولیات، دربار کے اطراف میں انفراسٹرکچر کی بہتری اور زائرین کو بہتر سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ اس مقام کو مذہبی سیاحت کا مرکز بنانے اور دینی تعلیم کا مرکز بنانے کے حوالے سے منصوبہ تشکیل دیا گیا ہے۔

اس منصوبے کے تحت دربار داتا گنج بخش کو ایک ویلفیئر مرکز میں ڈھالا جائے گا، جہاں مستحق زائرین کو کھانے، رہائش کی سہولیات ، ان کی تعلیم کے انتظام کے ساتھ ساتھ دربار کے بہتر انتظام کو بھی یقینی بنایا جائے گاتاکہ زائرین کی پارکنگ، لنگر اور دیگر سہولیات کو بہتر بنایا جا سکے۔

بادشاہی مسجد کے تحفظ و آرائش کے حوالے سے بتایا گیا کہ اس منصوبے میں تبرک گیلری، قرآن ہال، صحن کی بہتری اور نمازیوں کے لیے سہولیات کو بہتر بنایا جائے گا۔ وزیرِ اعظم عمران خان کو پنجاب میں دیگر مزارات کی بحالی و تحفظ کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک بھر میں واقع مزارات ہمارا تاریخی ورثہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ مذہبی سیاحت کے فروغ کے حوالے سے ان مقامات کی بحالی و تحفظ انتہائی اہم ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ درباروں کے اطراف میں واقع اراضی کو مناسب طریقے سے بروئے کار لانے کے حوالے سے جامع پلان تشکیل دیا جائے تاکہ اس سرکاری اراضی کو ہسپتالوں اور تعلیمی اداروں کے لئےاستعمال میں لایا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں