29

الیکشن کمیشن و نادرا میں تنازع نہیں غلط فہمی تھی، طارق ملک

ای سی پی آئینی ادارہ ہے اور اتھارٹی کمیشن کو نہیں بتا سکتی کہ کیا کرنا ہے، چےئرمےن نادرا
وا شنگٹن ( ایجنسیاں )نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کے چیئرمین طارق ملک نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) ایک آئینی ادارہ ہے اور اتھارٹی کمیشن کو نہیں بتا سکتی کہ کیا کرنا ہے۔ واشنگٹن میں ایک نیوز بریفنگ دیتے ہوئے چیئرمین نادرا نے کہا کہ ہم انہیں نہیں بتا سکتے کہ کیا کریں لیکن وہ ہمیں تنبیہہ کر سکتے ہیں، وہ آئینی ادارہ ہیں جبکہ ہم ایک تکنیکی ادارہ ہیں۔ چیئرمین نادرا نے کہا کہ یہ دونوں اداروں کے آئی ٹی سربراہان کے درمیان رابطہ تھا نہ کہ ادارہ جاتی تصادم یہ ایک غلط فہمی ہے اور جب میں واپس آو¿ں گا تو اسے دور کر دیا جائے گا۔طارق ملک نے مزید کہا کہ کہ ایک نیا الیکٹرانک ووٹنگ سسٹم بنانے میں 3 سال کا عرصہ لگ سکتا ہے لیکن نادرا نے ایک سال میں پورے سسٹم کو نئے سرے سے بہتر بنانے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے اصولی طور پر ایسا کرنے پر اتفاق کیا تھا لیکن نادرا تحریری منظوری کا انتظار کر رہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ الیکٹرانک ووٹنگ پر سیاسی جماعتوں کے درمیان کوئی اختلاف نہیں ہے ، جو ‘ایک شناخت، ایک ووٹ کا نظام’ لائے گا۔چیئرمین نادرا نے کہا کہ سیاسی جماعتیں ‘بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے لیے انٹرنیٹ ووٹنگ پر بھی متفق ہیں کیونکہ آئین ہر شہری کو ووٹ کا حق دیتا ہے’۔انہوں نے بتایا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی ڈاک ووٹنگ کا استعمال کر سکتے ہیں لیکن یہ غیر محفوظ ہے جبکہ نادرا ایک محفوظ اور شفاف نظام پیش کر رہا ہے جس سے بیرون ملک مقیم ووٹرز یہ چیک کرسکیں گے کہ کیا ان کے ووٹوں کا شمار ہوا ہے۔
طارق ملک

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں