32

دہشتگردوں کی پاک افغان بارڈر عبور کرنے کی کوشش، فائرنگ، دو جوان شہید

راولپنڈی(نیوزمارٹ دیسک) خیبرپختونخوا کے ضلع کرم میں دہشتگردوں نے پاک افغان بارڈر عبور کرنے کی کوشش کی اس دوران سکیورٹی فورسز اور دہشتگردوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا اور پاک فوج کے دو جوان شہید ہو گئے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق خیبرپختونخوا کے ضلع کرم میں افغانستان سے دہشتگردوں کی پاکستان میں داخلے کی کوشش ہوئی، بارڈر پار کرنے کی یہ کوشش 26 اور27 فروری کی درمیانی رات کی گئی۔آئی ایس پی آر کے مطابق سیکورٹی فورسز نے فوری اور مؤثر رد عمل دیتے ہوئے دہشت گردوں کی پاکستان میں گھسنے کی کوشش ناکام بنا دی۔آئی ایس پی آر کے مطابق اس دوران سکیورٹی فورسز اور دہشتگردوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا، فائرنگ کے باعث دو جوان شہید ہو گئے، شہید ہونے والوں میں لانس نائیک اسد اور سپاہی آصف شہید شامل ہیں۔ لانس نائیک اسد کا تعلق ضلع کرم اور سپاہی آصف کا تعلق ضلع لکی مروت سے ہے۔ترجمان پاک فوج کے مطابق دہشت گردوں کی جانب سے افغان سرزمین پاکستان کیخلاف استعمال کئے جانے پر پر شدید احتجاج کیا گیا، اور عبوری افغان حکومت سے پاکستان مخالف سرگرمیاں روکنے کا مطالبہ کیا گیا، پاک فوج اپنے سرحدوں کی دفاع کے لئے پرعزم ہے، دہشت گردی کا جڑ سے خاتمہ یقینی بنایا جائے گا، ہمارے جوانوں کی قربانیاں ہمارے عزم کو مزید تقویت دیتی ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں