36

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے آسٹریلین ہم منصب کا ٹیلی فونک رابطہ،اقتصادی، تجارتی ،تعلیمی، دفاعی، زرعی اور سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کا متمنی ہے

اسلام آباد (نیوزمارٹ ڈیسک):وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان، آسٹریلیا کے ساتھ اقتصادی، تجارتی ،تعلیمی، دفاعی، زرعی و سائینس اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبوں میں دو طرفہ تعاون بڑھانے کا متمنی ہے، عالمی برادری، افغان شہریوں کی معاشی و انسانی بنیادوں پر معاونت کے لیے ٹھوس اور موثر اقدامات اٹھائے۔پیر کو ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ان کی ?آسٹریلین ہم منصب ماریس پین نے ٹیلیفونک رابطہ کیا۔ دونوں وزرائے خارجہ کے مابین دو طرفہ تعلقات ،افغانستان کی ابھرتی ہوئی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال ہوا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان، آسٹریلیا کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کو خصوصی اہمیت دیتا ہے،دونوں ممالک کے مابین دو طرفہ تعلقات ،مشترک تاریخی حوالوں ، عوامی روابط اور کرکٹ سے لگاﺅ جیسے یکساں عوامل سے عبارت ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ افغانستان کا قریبی ہمسایہ ہونے کے ناطے، پاکستان، افغانستان میں بدامنی کے باعث سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے،افغانستان میں چالیس سالہ جنگ و جدل کے بعد قیام امن کی امید پیدا ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں شدید معاشی بحران کے پیش نظر، ضرورت اس امر کی ہے کہ عالمی برادری، افغان شہریوں کی معاشی و انسانی بنیادوں پر معاونت کے لیے ٹھوس اور موثر اقدامات اٹھائے،عالمی برادری کو افغانستان کے حوالے سے چیلنجز اور روشن امکانات دونوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فیصلے کرنا ہوں گے۔وزیر خارجہ نے آسٹریلوی ہم منصب کو کابل سے مختلف ممالک کے سفارتی عملے، بین الاقوامی اداروں کے اہلکاروں اور میڈیا نمائندگان کے جلد انخلائ کے سلسلے میں جاری پاکستانی معاونت سے آگاہ کیا اور کہا کہ پاکستان نے 37 ممالک کے 21 ہزار باشندوں کو افغانستان سے محفوظ انخلا میں معاونت فراہم کی۔دونوں وزرائے خارجہ کے مابین باہمی دلچسپی کے کثیر الجہتی شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ کے حوالے سے خصوصی تبادلہ خیال ہوا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ آسٹریلیا میں مقیم ایک لاکھ 25 ہزار سے زیادہ پاکستانی اور مختلف آسٹریلوی تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم 12 ہزار سے زائد طلبا ،دونوں ممالک کے مابین دو طرفہ تعلقات کے استحکام کا مظہر ہیں۔وزیر خارجہ نے آسٹریلوی ہم منصب کو کورونا وائرس کی وباکے باعث آسٹریلیا میں زیر تعلیم پاکستانی طلبا کو درپیش سفری مشکلات سے آگاہ کرتے ہوئے، ٹریول ایڈوائزری پر نظر ثانی کی ضرورت پر زور دیا۔دونوں وزرائے خارجہ نے پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان دو طرفہ تعلقات کی موجودہ نوعیت پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے، انہیں مزید مستحکم بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔وزیر خارجہ نے آسٹریلوی وزیر خارجہ کو دورہ پاکستان کی دعوت دی جسے انہوں نے شکریہ کے ساتھ قبول کیا۔\

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں