11

کے-ٹو پر چڑھ کر پاکستان کا جھنڈا لہرانے والے محمد علی سد پارہ کون ہیں؟

کون جانتا تھا کہ اونچی چوٹیوں پر کوہ پیماؤں کا سامان اٹھا کر اپنے کرئیر کا آغاز کرنے والا ایک سادہ سا انسان ملک کے لئے اتنا اہم ہوجائے گا کہ ایک دن پوری قوم اس کی زندگی اور سلامتی کے ساتھ واپس لوٹنے کی دعائیں مانگ رہی ہوگی ۔ہم بات کر رہے ہیں کے ٹو پر لاپتہ ہوئے محمد علی
سد پارہ کے بارے میں ۔ جو ایک مشہور کوہ پیما ہیں ۔ محمد علی 2 فروری 1976 کو سکردو شہر کے گردونواح میں واقع ایک گاؤں سد پاہ میں پیدا ہوئے ۔موسم کی سختی کو خاطر میں نہ لاتا یہ کوہ پیما پاکستان کے لئے باعثِ فخر ہے۔ 2016 میں الیکس ٹیکسیون اور سائمون مورو نے سد پارہ کو سراہتے ہوئے کہا تھا کہ سدپارہ کی صلاحیتوں کے بغیر وہ نانگاپربت کی اونچی پہاڑیاں سر نہیں کر سکتے تھے۔سدپارہ کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ وہ نانگا پربت، قراقرام سمیت دنیا کی آٹھ اونچی ترین چوٹیوں پاکستان کا جھنڈا لہرا چکے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں