22

لگژری اشیاءکی در آمد پر پابندی ختم: 600فیصد تک ڈیوٹی عائد‘ IMFشرائط پوری

اسلام آباد (نیوزمارٹ ڈیسک )حکومت نے عالمی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف)کے معاہدے کی پاسداری کرتے ہوئے لگژری اور غیر ضروری اشیا کی درآمدات پر عائد پابندی ہٹانے اور درآمد شدہ اشیا پر 400 سے 600 فیصد ڈیوٹی عائد کرنے کا اعلان کردیا۔وزیر خزانہ مفتاح اسمعیل نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے غیر ضروری اشیا کی درآمدات پر پابندی لگادی تھی اور اب اس کو دو ماہ سے زیادہ کا عرصہ گزر چکا ہے، آئی ایم ایف بھی یہ چاہتا تھا کہ یہ پابندی ہٹائی جائے لیکن ہم نے اس میں تاخیر کی ہوئی ہے کیونکہ وزیر اعظم شہباز شریف نہیں چاہتے کہ ہم لگژری آئٹمز کو پاکستان میں آنے کی اجازت دیں جو بالکل درست ہے۔جس کی بدولت ہم 36 ارب روپے مزید ٹیکس اکٹھا کر سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پچھلے سال کے مقابلے میں برآمدات 7 سے 8 فیصد زیادہ ہیں جبکہ درآمدات 18 سے 19 فیصد کم ہیں، تجارتی خسارہ بھی گزشتہ سال کے مقابلے میں 30 فیصد کم ہے جبکہ بینکنگ کے سیکٹر میں 60 کروڑ ڈالر زیادہ وصول ہوئے ہیں۔وزیر خزانہ نے امید ظاہر کی کہ ڈالر کی قدر میں کمی کا سلسلہ جاری رہے گا اور اپنے وسائل میں رہ کر خرچ کرنے کی پالیسی پر عمل کرتے رہیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں