8

الیکشن میں چند ماہ باقی‘ نواز شریف کی واپسی میں کوئی رکاوٹ نہیں،صدر علوی

اسلام آباد(نیوزمارٹ ڈیسک)صدر مملکت عارف علوی نے کہا ہے کہ میں صدر نہیں بننا چاہتا تھا،کہا گیا تھا اسپیکر بنائیں گے، کسی وجہ سے خان صاحب نے کہا آپ صدر بن جائیں۔نجی ٹی وی کو انٹرویو میں صدر عارف علوی نے کہا کہ کچھ لوگ کہتے ہیں واضح مینڈیٹ آنا چاہیے جو معیشت کیلئے اچھا ہے، نواز شریف کی وزارت عظمیٰ میں عمران خان کے ساتھ ایک بار پی ایم ہاؤس گیا، اس وقت کے وزیر اعظم نواز شریف کہہ رہے تھے سینیٹ الیکشن میں بے انتہاپیسہ چلتا ہے جسے مل کر روکنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایوان صدر میں پریشان کن وقت گزر رہا ہے، ملک میں سیلاب، سیاسی معاشی بحران ہو تو ذہنی پریشانی بڑھ جاتی ہے، سب سے اپیل ہے ملک کا ماحول ایسا ہو کہ معاملہ حل کی طرف جائے، پاکستان پولرائزیشن کا متحمل نہیں ہوسکتا۔صدر عارف علوی نے کہا کہ حکومت کی تبدیلی پر چیف جسٹس سپریم کورٹ کو لکھے گئے خط کا جواب نہیں آیا، چیف جسٹس کو خط میں لیاقت علی خان کی شہادت کا ذکر کیا کہ آج تک تحقیقات کاپتہ نہیں چلا، بیگم رعنا لیاقت علی خان نے میرے والد کو سمری دی تھی جس میں تحقیقات تھیں۔بھٹونے بھی خط لکھا تھا کہ ان کے خلاف سازش ہوئی ہے، ضیا الحق کا طیاہ گرایا گیا کس نے سازش کی؟، نوازشریف کاکیس پاناما پیپرز سے متعلق تھاکسی حکومت نےنہیں کیا تھا، پارلیمنٹ اتفاق رائے سےنااہلی کوختم کرنا چاہے تو اس کا حق ہے، پارلیمنٹ کے بنائے گئے قوانین کے تحت ہی یہ نا اہلی ہوئی تھی، پارلیمنٹ دو تہائی سے نا اہلی پر ترمیم کرناچاہتی ہےتوبات چیت میں حرج نہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں