56

وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی پسماندہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے ویژن و گلگت بلتستان سے خصوصی دلچسپی!

گلگت:(نمائند خصوصی) وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی پسماندہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے ویژن و گلگت بلتستان سے خصوصی دلچسپی!
حکومت گلگت بلتستان کی 05 مہینوں کی مختصر مدت میں بہترین حکمت عملی و خصوصی کوششیں!
قلیل مدت میں گلگت بلتستان کیلئے گلگت بلتستان جامع ترقیاتی پلان کے تحت اب تک 122ارب 75 کروڑ کے انتہائی اہم میگا منصوبے سی ڈی ڈبلیو پی اور ایکنک سے منظور!
1۔شعبہ توانائی
29 ارب 32کروڑ کے منصوبے:-
▪︎30میگاواٹ ہائیڈرو پاور پروجیکٹ غواڑی گانچھے,
لاگت 16ارب 39کروڑ
▪︎ہینزل 20میگاواٹ پاور پروجیکٹ لاگت 12ارب92 کروڑ
یہ اہم منصوبہ 11سالوں سے صرف کاغذوں کی زینت بنا ہوا تھا اس منصوبے کی متعلقہ فورم سے منظوری مل گئی ہے۔
2۔شعبہ روڈ انفراسٹرکچر و کمیونی کیشن
84 ارب 89کروڑ لاگت کے منصوبے:-
▪︎داریل اور تانگیر ایکسپریس وے بشمول کھنبری اور بونر روڈزکی تعمیر لاگت 5ارب97کروڑ،
▪︎شاہراہ نگر 40 کلو میٹر کا منصوبہ لاگت 4ارب 50 کروڑ، ▪︎بین الاصوبائی رابطہ سڑکوں کی تعمیر اور گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے مابین اکنامک کوریڈور کا منصوبہ لاگت19ارب19 کروڑ
▪︎ گلگت شندور ایکسپریس وے کی تعمیر لاگت 49ارب94کروڑ،
3۔شعبہ صیحت
7 ارب88 کروڑ لاگت کے منصوبے:-
▪︎گلگت میں میڈیکل اور نرسنگ کالج کے قیام کا منصوبہ لاگت 4ارب92کروڑ
▪︎صوبائی ہیڈکوارٹر ہسپتال گلگت کی ماسٹر پلان کے تحت اپ گریڈیشن لاگت2ارب96 کروڑ
4۔شعبہ تعلیم
تعلیم کے شعبے میں پہلی مرتبہ گلگت بلتستان کے طالب علموں کیلئے ملک کے بڑے نامور تعلیمی ادارو ں میں اعلیٰ تعلیم کیلئے سکالر شپ کا منصوبہ لاگت 64 کروڑ 84لاکھ کا منصوبہ منظور
اس کے علاوہ شتونگ نالے کے رخ کی تبدیلی کے منصوبے کا PC-II کو بھی منظور کیا گیا ہے۔
وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید کی کوششوں کی وجہ سے 31 مئی کو ہونے والے سی ڈی ڈبلیو پی کا خصوصی اجلاس ہوگا ▪︎جس میں عطاء آباد 54میگاواٹ ہائیڈرو پاور پروجیکٹ اور صحت کے شعبے میں مزید اہم منصوبوں کی منظوری دی جائے گی۔علاوہ ازیں ▪︎سکردو کیلئے سیوریج کا منصوبہ اور گلگت کیلئے انٹیگریٹڈ(Integrated)واٹر سپلائی کے منصوبہ کا بھی سی ڈی ڈبلیو پی سے آئندہ چند دنوں میں منظوری ملے گی اور اسی سال ان منصوبوں کا ٹینڈر ہوگا۔
وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر،وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پوراور ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن کی خصوصی تعاون اور کوششوں کی وجہ سے مختصر مدت میں گلگت بلتستان کیلئے فیڈرل پی ایس ڈی پی میں شامل اہم اور میگا منصوبے جس تیزی سے سی ڈی ڈبلیو پی اور ایکنک سے منظور ہورہے ہیں اس کی نظیر ماضی میں نہیں ملتی ہے۔ گلگت بلتستان میں حقیقی معنوں میں تبدیلی آئے گی اور عوام کی معیار زندگی بہتر ہوگی۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان گلگت بلتستان کی تعمیر وترقی میں جس طرح خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں اور صوبائی حکومت کیساتھ بھرپور تعاون کررہے ہیں اس کے نتائج اور ثمرات آنے والے دنوں اور مہینوں میں مزید نظر آئیں گے۔
گلگت بلتستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ وفاقی اور صوبائی حکومت گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کیلئے یکسوئی کیساتھ دن رات کام کررہے ہیں اور اس کے نتائج بھی عملی طور پر سامنے آرہے ہیں جس کی وجہ سے گلگت بلتستان کی 70سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ گلگت بلتستان کیلئے میگا منصوبے منظور ہورہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں