39

صدرمملکت کا علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے وائس چانسلرکو ہارڈشپ کیس کافیصلہ طالبہ کے حق میں کرنے کی ہدایت

اسلام آباد(نمائند خصوصی):صدرمملکت ڈاکٹرعارف علوی نے علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے وائس چانسلرکو ہارڈشپ کیس کافیصلہ ایک طالبہ کے حق میں کرنے کی ہدایت کی ہے جنہیں یونیورسٹی انتظامیہ کی بدانتظامی کی وجہ سے ایم ایڈ کی ڈگری جاری کرنے سے انکارکردیا گیاتھا۔صدرمملکت نے اس ضمن میں وفاق محتسب کی فائنڈنگز کو بھی معطل کردیا ہے جس میں وفاقی محتسب نے سپریم کورٹ کے ایک فیصلہ کاحوالہ دیتے ہوئے قراردیاتھا کہ عدالتوں کوتعلیمی اداروں کے پالیسی معاملات میں مداخلت سے گریز کرنا چاہئے۔شکایت کنندہ مس آسیہ سعیدملک نے وفاقی محتسب کے فیصلے کے خلاف صدرپاکستان کے پاس اپیل دائرکی تھی۔ صدرمملکت ،جو یونیورسٹی کے وائس چانسلربھی ہے ، نے اس کیس کو منفردقراردیا ہے جس میں یونیورسٹی کے حکام نے اپنی بدانتظامی پرقابوپانے کی بجائے طالبہ کونشانہ بنایا۔ مس آسیہ سعید یونیورسٹی کے ایم ایڈپروگرام میں داخل تھیں، وہ خزاں 2017 میں ہونے والے امتحان میں پیش ہوئیں تاہم وہ ورکشاپ میں شامل نہ ہوسکی۔انہیں بعدازاں علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی نے لیٹرنمبرNo. F. M.Ed/MD Edu.-W/S (Spr-19) MN/115 dated 21.08.2019 کے ذریعہ ورکشاپ میں شامل ہونے کی اجازت دی گئی تاہم بالاخرانہیں ڈگری دینے سے انکارکردیاگیا، مذکورہ طالبہ نے یونیورسٹی انتظامیہ کی ناانصافی کے خلاف وفاقی محتسب سے رابطہ کیا۔علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی نے موقف اختیارکیاکہ عملہ نے غلطی سے ورکشاپ میں شامل ہونے کی اجازت دی ، یہ ایک جعلی خط تھا اورقواعد وضوابط کے تحت طالبہ کودوبارہ داخلہ لینا ہوگا۔طالبہ کے تحفظات کو نوٹس لیتے ہوئے صدرمملکت نے کہاکہ یونیورسٹی نے متاثرہ طالبہ کو مشکل سے حاصل اہلیت سے محروم کرنے کیلئے حیلہ جوئی کا سہارالیاہے۔اپنے تحریری آرڈرمیں صدرمملکت نے علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی ایکٹ 1974 کے سیکشن 12 کاحوالہ دیاہے جووائس چانسلرکو حقیقی ہارڈ شپ امور میں اکیڈیمک کونسل کی اجازت سے قواعد نرم کرنے کا اخیتارتفویض کرتاہے۔صدرمملکت نے کہاہے کہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے پاس یہ اختیارہے کہ وہ ناانصافی کا شکار سائلہ کو نتائج اورڈگری جاری کرکے انہیں سہولت فراہم کرے۔صدرمملکت نے کہاکہ معاملہ کے غیرمعمولی نوعیت کے پیش نظریہ وفاقی محتسب کیلئے یونیورسٹی حکام کی غلطی سے متاثرہ شکایت کنندہ کے تحفظات دورکرنے کا ایک موزوں کیس تھا۔صدرمملکت نے متاثرہ طالبہ کی اپیل پروفاقی محتسب کے فائنڈنگز کو معطل کرتے ہوئے علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے وائس چانسلرکو ہدایت کی ہے کہ اس معاملہ کوہارڈ شپ کیس تصورکرتے ہوئے طے کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں