29

پاکستان چین کے انسداد غربت کے تجربہ سے سیکھ سکتا ہے ،مسعود خالد

اسلام آباد(ویب ڈیسک) چین میں پاکستان کے سابق سفیر مسعود خالد نے کہا کہ پاکستان چین کے انسداد غربت کے تجربہ سے سیکھ سکتا ہے۔ چائنا اکنامک نیٹ کو انٹرویو میں انہوں نے کہا میں ذاتی طور پر سوچتا ہوں کہ اگر پاکستان کو چین سے سبق سیکھنا ہے تو یہ غربت کے خاتمے کا چینی معجزہ ہے جس کی انسانی تاریخ میں مثال نہیں ہے۔ مسعود خالد نے غربت کے خلاف چین کی غیر معمولی کامیابیوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ چین غربت کے مسئلے کو حل کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے کہ 800 ملین افراد لفظی طور پر غربت کے جال سے نکل چکے ہیں ۔ اس کے علاوہ جیسا کہ انہوں نے دیکھا چین ایک علمی معیشت بنتا جارہا ہے۔ علمی معیشت کیلئے چین تحقیق اور ترقی ، تعلیم ، سائنس اور ٹیکنالوجی میں بہت زیادہ سرمایہ کاری کر رہا ہے۔ انہوں نے دس اہم صنعتوں کا انتخاب کیا ہے ، جو چین کو ٹیکنالوجی میں مضبوط بنانے کیلئے ویلیو ایڈڈ ہوگی۔ انہوں نے کہا میرے خیال میں پاکستان بہت کچھ سیکھ سکتا ہے ، اور چین مدد کرنے کو تیار ہے۔ انہوں نے کہا سی پیک خود ہمارے تعاون کو آگے بڑھانے کے لئے پلیٹ فارم یا چھتری مہیا کرتا ہے۔ مسعود خالد نے کہا چین نے کمیونسٹ پارٹی آف چائنا (سی پی سی) کی سربراہی میں جو کامیابیاں حاصل کیں وہ ہمہ جہت اور متاثر کن ہیں۔ انہوں نے کہا میں نے 1981 میں پہلی بار چین کا دورہ کیا۔ اس کے بعد میں جب بھی چین گیا میں نے پوری رفتار سے چین کی ترقی اور لوگوں کی زندگی میں مثبت تبدیلیاں دیکھی۔ انہوں نے کہا کہ مغربی سکالر ابھی بھی اس کو نہیں سمجھ رہے ہیں اور ابھی بھی ان کیلئے ایک معمہ بنی ہوئی ہے جبکہ وہ یہ بھول جاتے ہیں کہ چین کی 5000 سال پرانی قدیم تاریخ ہے ، اور چینی اقدار ثقافت اور روایات میں بھی تسلسل رہا ہے۔ وہ اس بات کی پوری طرح تعریف نہیں کرتے ہیں کہ چینی لوگ کتنے لچکدار ، محنتی ، سنجیدہ ذہن اور سائنس پر یقین رکھنے والے ہیں ۔ چین کی گذشتہ دہائیوں میں نشیب و فراز آئے لیکن سی پی سی نے فیصلہ کیا ہے کہ ہمیں اس نازک لمحے کو تبدیل کرنا ہوگا اور انہوں نے مختلف مراحل پر اہداف حاصل کرلئے ہیں۔ مسعود خالد نے کہا چینی عوام اور سی پی سی کو اپنی کامیابیوں پر فخر کرنا چاہئے ، چین کے دوست کی حیثیت سے ، ہم نہ صرف ان کی کامیابیوں کی تعریف کرتے ہیں ،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں