53

گلگت محمد اباد ہسپتال کے ساتھ دہرا معیار رکھنا شرمناک عمل ہے،حکومت کا اب تک خاموشی کسی بڑی تحریک کا سبب بننے جاری ہے

گلگت(پناہ نیوز ڈیسک )محمد اباد ہسپتال کے ساتھ دہرا معیار رکھنا شرمناک عمل ہے۔ سب سے بڑے حلقے کے ہسپتال کی اپ گریڈیشن نہ ہونا مایوس کن ہے۔ قیمتی مشینری چالو نہ ہونے عملہ کی کمی صوبایی حکومت کے منہ پر زوردار طمانچہ ہے۔ اب ہسپتال اور کالج کے بنیادی مسایل کے حل کے لیے تحریک چلاییں گے۔ محمد اباد ہسپتال سے کسی مشین کا دوسرے ہسپتال منتقلی صوبایی حکومت کی خود کشی ہوگی۔ ان خیالات اظہار ملانا اکبر حسین وزیر نے ایک اخباری بیان میں کہا ۔ انھوں نے مزید کہا کہ اس بارے پورے حلقے کے عوام بالخصوص محمد اباد اور اوشکھنداس کےساتھ جلال اباد اور بگروٹ کے عوام میں شدید بے چینی پایی جاتی ہے حکمران ہوش کے ناخن لیں ہسپتال کو پانی ہم نے اپنی مدد اپ کے تحت اور رضاکاران طور پر پہنچایا جب ہر طرف مریضوں کو کسی ہسپتال میں ایڈمٹ نہہں کرنے دیتے تھے احتجاج ہوتا تھا تب محمد اباد کے عوام نے تمام مریضوں کو خوش امدید کہا۔ مولاناصاحب نے مزید کہا کہ کالج اور ہسپتال کے لیے درکار اسٹاف کی کمی کے خلاف عنقریب عوامی رابطہ مہم شروع کیا جاےگا۔ پانی اور بجلی کے بغیر ہسپتال اور کالج کو کیسے چلاتے ہو؟حکومت کا اب تک خاموشی کسی بڑی تحریک کا سبب بننے جاری ہے جو احتجاج پھر دھرنا بھی ہو سکتا ہے لہذا صوبایی حکومت خواب غفلت سے بیدار ہو جاے اور فوری طور پر کالج اور ہسپتال کے الگ سے فنڈز کا اعلان کرے تاکہ مریضوں اور طلبا کی پریشانی دور ہو سکیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں