10

گلگت پلاسٹک فری مہم کے حوالے سےاجلاس منعقدہ،مشین، بایو ڈیگرریڈیبل (Biodagradable)بیگ بنانے کے لیے 94ملین کے قرضے رکھے گئے

گلگت۔(نیوز مارٹ) ڈپٹی کمشنر /ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ گلگت کیپٹن (ر) اُسامہ مجید چیمہ کی زیر صدارت ایک اہم اجلاس پلاسٹک فری مہم کے حوالے سے منعقد ہوئی۔ جس میں اسسٹنٹ کمشنر گلگت، اسسٹنٹ کمشنر دنیور، اسسٹنٹ کمشنر جگلوٹ، ڈی ڈی ای پی آئی گلگت، چیف آفیسر ڈسٹرکٹ کونسل گلگت، چیف آفیسر میونسپل کارپویشن گلگت میٹ انسپکٹر، فوڈ انسپکٹر،صدر بازار کمیٹی گلگت،صدر انجمن تاجران و ممبران گلگت بلتستان، صدر فروٹ منڈی گلگت،لوکل فروٹ منڈی کے صدر اور دیگر آفیسران نے شرکت کی۔ اجلاس کے دوران ڈپٹی کمشنر گلگت نے خطاب کر تے ہوئے کہا ہے کہ یکم جنوری سے پلاسٹک فری بنانے کے لیے تمام تر وسائل برؤے کار لائیں جائینگے۔ اس حوالے سے ڈی ڈی ای پی آئی گلگت نے پلاسٹک فری مہم کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر گلگت کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ کلاتھ بیگ بنانے کے حوالے سے تین قسم کے قرضے دیئے جائینگے جس میں مشین کے لیے اور بایو ڈیگرریڈیبل (Biodagradable)بیگ بنانے کے لیے 94ملین کے قرضے رکھے گئے ہیں جسمیں 50یونٹس کا کاٹیج انڈسٹرے کے لیے لون ہیں اور ہر ڈسٹرکٹ میں پایچ یونٹس ہونگے دوسرے لون میں میڈیم انڈسٹری کے لیے 38ملین کے لونز رکھے گئے ہیں اور اس میں دو گلگت کے لیے اور ایک بلتستان اور ایک دیامر کے لیے رکھے گئے ہیں۔ تیسر ے درجے کے لیے کل 31لونز ہیں جن میں ضلع گلگت کے لیے چار اور باقی اضلاع کے لیے تین تین لونز ہو نگے اور ایک لو نز ایک ملین کا ہے اور یہ لونز بغیر منافع کا دیئے جائینگے اور یہ سارے لونز جی بی آر ایس پی کے ذریعے دیئے جائینگے۔ ڈپٹی کمشنر گلگت نے تینوں سب ڈویژنوں کے اسسٹنٹ کمشنر ز کو ہد ایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اپنے اپنے سب ڈویژنوں میں بازار کمیٹی اور انجمن تاجران سے ملکر پلاسٹک فری مہم چلائیں۔ ڈپٹی کمشنر گلگت نے ڈی ڈی ای پی آئی گلگت کو ہد ایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ جلداز جلدمارکیٹوں میں کلاتھ بیگ کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔ اس مہم کو کامیاب بنانے کے لیے عوام الناس میں شعور اور آگاہی بیدار کرنے کے لیے تینوں سب ڈویژنوں میں پلاسٹک فری مہم چلائیں تاکہ پلاسٹک کی جگہ میں کلاتھ بیگ کا استعمال ہو سکے۔پلاسٹک کے استعمال سے کیسنر کی بیماریاں پھیلتی ہیں ان بیماریوں کی روک تھام کے لیے گلگت بلتستان حکومت نے کلاتھ بیگ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں