13

ن لیگی رہنما پر قاتلانہ حملے کے واقعے میں اہم پیشرفت

لاہور: مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی بلال یاسین پر قاتلانہ حملے کے واقعے میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔

پولیس نے مسلم لیگ ن کے رہنما بلال یاسین پر قاتلانہ حملے میں استعمال ہونے والے اسلحہ سے متعلق پتا لگالیا۔

پولیس کا بتانا ہے کہ حملے میں استعمال ہونے والا اسلحہ نیلا گمبدا اسلحہ مارکیٹ سے خریدا گیا، پولیس نے مارکیٹ سے تین اسلحہ ڈیلرز کو حراست میں لے لیا۔

پولیس کے مطابق تینوں ڈیلرزسے اسلحہ کی خریدوفروخت کا ریکارڈ بھی قبضہ میں لے لیا گیا۔

پولیس نے بتایا کہ تینوں گرفتار ڈیلرز کے ڈی وی آر بھی قبضے میں لے لیے گئے ہیں، اسلحہ کس نے خریدا اور کس بنیاد پر خریدا اس کی تفتیش جاری ہے۔

بلال یاسین پر قاتلانہ حملہ، حملہ آوروں کی شناخت ہوگئی

یاد رہے کہ گزشتہ روز شام کو بلال یاسین پر بلال گنج کے علاقے میں نقاب پوش افراد نے فائرنگ ‏کی تھی، ایک گولی ان کے پیٹ اور دوسری پاؤں پر لگی تھی، پیٹ کی گولی آج صبح آپریشن کے ذریعے نکال لی گئی۔

سیف سٹی ڈپارٹمنٹ کا کہنا تھا کہ کیمروں کی مدد سے 2 موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں کی شناخت کی گئی ہے، بلال یاسین نے شبہ ظاہر کیا کہ ایک حملہ آور نے ڈولفن پولیس جیسی وردی پہن رکھی تھی۔

پولیس نے ایم پی اے بلال یاسین پر حملے کا مقدمہ آج تھانہ داتا دربار میں درج کر لیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں